709

برطانیہ بھائی نے بھائی کی جان لے لی

لندن (پی اے) بھائی کی تلاش میں نکلنے والےایک شراب نوش ڈرائیور نے اپنے ہی بھائی کو کچل ڈالا، کیمبرج شائر پولیس کے مطابق 34سال عدن اپنے والد کے گھر سے نکلاتھا ،جس پر اس کے 32 سالہ بھائی ناتھن پیرسن نے یہ سوچ کر کہ اس کابھائی کسی حادثے کاشکار نہ ہوجائے کرائے پر گاڑی لے کر اس کی تلاش کیلئے نکلا لیکن اچانک اس نے گاڑی روک دی اور اس کابھائی گاڑی کے پہیوں تلے دب کر ہلاک ہوگیا۔ ناتھن پیرسن نے پولیس کو بتایا کہ وہ یہ سوچ کر کہ بھائی نے بھی شراب پی رکھی ہے ایسےکوئی گاڑی اس کے بھائی کو ٹکر نہ ماردے یا وہ کسی گڑھے میں نہ گرجائے ،لیکن اس نے یہ دیکھ کر کہ عدن گاڑیوں کے چلنے کے راستے پر چلا جارہاہے گاڑی روکی لیکن وہ اسی کی گاڑی کے پہیوں تلے دب کر ہلاک ہوگیا۔پیرسن کو گزشتہ پیر کو کیمبرج کورٹ نے 2 سال کی سزا سنادی تاہم سزا پر عملدرآمد21 ماہ بعد سے ہوگا۔ملزم نے عدالت میں اعتراف کیاکہ اس نے مقررہ حد سے زیادہ مقدار میں شراب پی رکھی تھی اور لاپروائی سے گاڑی چلارہاتھا ۔ان دونوں بھائیوں نے اپنے باپ کے ساتھ ایک پب میں شراب پی تھی جہاں ناتھن پیرسن انھیں لے کر باپ کے گھر گیا جہاں کچھ دیر کے بعد عدن نے کہا کہ وہ اپنے گھر جائے گا جو کہ اس کے باپ کے گھر سے 6 میل کے فاصلے پر واقعے پر تھا سب نے عدن کو روکنے کی کوشش کی لیکن وہ نہیں مانا اور نکل کھڑاہوا،ناتھن نے کچھ دیر انتظار کیا پھر اپنے بھائی کے تحفظ کے بارے میں فکر مند ہوکر اسے تلاش کرنے کیلئے نکل کھڑا ہوا اوریہ حادثہ ہوگیا ملزم پیرسن نے پولیس کو بتایاکہ اسے اندازہ نہیں تھا کہ اس کی رفتار بہت زیادہ ہے اور وہ تینوں سے زیادہ ہوش میں تھا۔ملزم کو21ماہ کی معطل سزا کے ساتھ ہی 5 سال تک ڈرائیونگ کی ممانعت کردی گئی ہے جس کے بعد اسے دوبارہ ڈرائیونگ کا ٹیسٹ دینا ہوگا ،اسے 40 دن کی ری ہبلی ٹیشن ایکٹیوٹی میں حصہ لیناہوگا اور 200 گھنٹے بلامعاوضہ خدمات انجام دیناہوں گی ،تفتیشی سارجنٹ مارک ڈولارڈ کا کہنا ہے اس کیس سے شراب پی کر گاڑی چلانے کےخطرناک نتائج کا اندازہ ہوتا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں